گیس اور بجلی کی قیمتوں میں کتنے فیصد اضافہ کیا گیا ہے؟ وزیر خزانہ اسد عمر نے تمام افواہوں کا ڈراپ سین کر دیا

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) وزیر خزانہ اسد عمر نے اپٹما کے وفد سے ملاقات میں واضح کیا کہ گیس کی قیمتوں میں اضافے کا کوئی فیصلہ نہیں کیا گیا۔تفصیلات کے مطابق دو روز قبل ایک خبر منظر عام پر آئی تھی جس میں وزیراعظم عمران خان نے وزارت پٹرولیم کوگیس کی قیمتوں میں اضافے کیلئے گرین سگنل دے دیا تھا۔ وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت گیس کی قیمتیں بڑھانے سے متعلق جائزہ لیا گیا، وزارت پٹرولیم نے گیس کی قیمتوں سے

متعلق وزیراعظم کوبریفنگ دی۔وزارت پٹرولیم نے وزیراعظم کوآگاہ کیا کہ گیس کی قیمتوں میں اضافہ ناگزیر ہوچکا ہے۔سابق حکومت نے 4سال تک گیس کی قیمتوں میں اضافہ روکے رکھا۔گیس کی قیمتوں میں اضافہ نہ کیا گیا تو گیس کمپنیاں دیوالیہ ہوجائیں گی۔اوگرا نے گیس کی قیمتوں میں 180فیصد تک اضافے کا فیصلہ کیا ہوا ہے۔گیس کی قیمتوں میں اضافے کیلئے سمری دوبارہ ای سی سی کے اجلاس میں بھیجی جائے گی۔اس ساری صورتحال میں اپوزیشن نے گیس کی قیمتوں میں اضافے کے خلاف سخت احتجاج کیا تھا اور اس احتجاج کا دائرہ کار پھیلانے کا عندیہ دیا گیا تھا۔تاہم تازہ ترین خبر کے مطابق وزیر خزانہ اسد عمر نے گیس کی قیمتوں میں اضافے کی تردید کر دی۔زیر خزانہ اسد عمر سے اپٹما کے وفد نے ملاقات کی، ملاقات میں گیس اور بجلی کی قیمتوں اور ٹیکس امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ وزیر خزانہ نے کہا کہ گیس اور بجلی کی قیمتوں میں اضافے کا کوئی فیصلہ نہیں کیا گیا۔ برآمدی شعبے کی ترقی کے لئے ہر ممکن تعاون کیا جائے گا۔یاد رہے کہ اس سے قبل وفاقی حکومت نے بجلی کی قیمتوں میں اضافہ کیا جبکہ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں معمولی کمی کرکے عوام کوخوشخبری بھی دی تھی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں